نیا موسم

خواب کا دروازہ کھلاہے
اب ہم پھول ہیں
بکھرے رنگ
ناچتی خوشبوئیں
ہمارے بدن پر اترچکی ہیں
گلے میں نئے دن کی مالا ہے
اور آنکھیں یوں روشن ہیں
جیسے سورج سامنے ہو
خوابو ں کی دہلیز پر
اب کوئی سیا ہ موسم
نہیں ہے

One thought on “نیا موسم”

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *